سخن شناس حضرات کیلئے بہترین شاعری


- -

کچھ حرفِ التجا تھے دعاؤں سے ڈر گئے


غم کے مجرم خوشی کے مجرم ہیں


تری نظر کے اشاروں سے کھیل سکتا ہوں


تاروں سے میرا جام بھرو میں نشے میں ہوں


ایک وعدہ ہے کسی کا جو وفا نہیں ہوتا


چاک دامن کو جو دیکھا تو ملا عید کا چاند


ہر مرحلۂ شوق سے لہرا کے گزر جا


میں تلخئ حیات سے گھبرا کے پی گیا


محفلیں لُٹ گئیں جذبات نے دم توڑ دیا


کلیوں کی مہک ہوتا تاروں کی ضیا ہوتا


تیری نظر کا رنگ بہاروں نے لے لیا


اے دلِ بے قرار چپ ہو جا


اے حسنِ لالہ فام! ذرا آنکھ تو ملا


اس درجہ عشق موجبِ رسوائی بن گیا



اردو حقائق 2020